Poetry

آنکھ پر جو سایہ سا پڑ رہا ہے

میں تمہار ی تصویر پر اک نظم کہوں گااس تصویر میںبائیں آنکھ پر جو سایہ سا پڑ رہا ہےاس کی اداسی پر لکھوں گازمانوں کا دکھ تمہاری اس آنکھ میں کیوں اتر آیا ہےکیوں ؟؟اس سوال کا جواب ڈھونڈوں گامیں تم پر اک نظم لکھوں گااس نظم کو تم پڑھو گیاور کچھ لمحوں کے لیے …

آنکھ پر جو سایہ سا پڑ رہا ہے Read More »

رزیل لمحے 

رزیل لمحے جب کہا تھا اپنی عادت بدل لو اور جب دیکھا تھا کہ تم نے محبت ہی بدل ڈالی جب کہا تھا بس مجھے دیکھو اور جب دیکھا تھا کہ تم نے مجھ سے ہی نظر چُرا لی

زہریلی بارش 

زہریلی بارش اُس دن کی بارش دیکھی ہے کبھی؟ اس دن کی۔۔ جس دن تمھاری آنکھوں کا رنگ بدل گیا تھا جس دن بارش میں میرے آنسو گھل رہے تھے اور تمھارا جسم کسی اور جسم میں گھل رہا تھا اس دن کی بارش دیکھی ہے کبھی ؟ دعا کر نا ایسی بارش نہ دیکھو …

زہریلی بارش  Read More »

الٹے کام

االٹے کام میں اسے بری عادتیں بدلنے کا کہتی رہی وہ محبت ہی بدل کر چلا گیا میں اسے زندگی کی دعائیں دیتی رہی وہ مجھے موت دے کر چلا گیا

بس اور کچھ نہیں

بس اور کچھ نہیں مجھے تم سے اب محبت نہیں رہی کسی اور سے ہو گئی ہے مگر تم غم نہ کرنا مجھ میں خوفِ خدا ہے میں تلافی کر وں گا میں تمھارے نام ایک پلاٹ کر دوں گا سونے کے ڈھیر سارے زیورات دلواؤں گا ذیئزائنر کپڑوں کے ڈھیر لگا دوں گا کتابوں …

بس اور کچھ نہیں Read More »

سولڈ آوٹ چھابا

سولڈ آوٹ چھابا وہ اس کے پاس آبیٹھا جب چوک میں ااپنی چوڑیوں کا چھابا لگائے وہ تنہا بیٹھی تھی ہری،نیلی،پیلی اور گلابی چوڑیاں !!چوڑیاں لے لو ۔۔چوڑیا ں لے  دھیرے سے اس کے کان میں بولا اوروں کو بہت چوڑیاں پہنا دیں اب تمھاری باری ہے لاؤ پکڑاؤ ۔ ۔۔ اپنی سُونی کلائی ۔۔۔۔ …

سولڈ آوٹ چھابا Read More »

ایک پرائی گڑیا کے نام 

ایک پرائی گڑیا کے نام  وہ اکیلی بیٹھی ہو تی تو میں اس کے ساتھ جا بیٹھتی اور ہم مل کے ستاروں میں اس کی گمشدہ ماں کو ڈھونڈتے نیند کی پریاں اسے بلاتیں تو وہ میرے بازو پر سر رکھ کر سو جاتی اسے ممتا کی طلب ہو تی تو میرے سے پیٹ سے …

ایک پرائی گڑیا کے نام  Read More »

گلہری کہ ناری 

گلہری کہ ناری میرے کمرے کی کھڑکی کے باہر ایک درخت نظر آرہا ہے ۔۔ہمیشہ ہی نظر آتا ہے ۔۔ اس کے نیچے لیٹی تھکی ہاری گلہری یو ں پڑی لگتی ہے جیسے ہار گئی ہو تمام عمریں محبتیں بانٹتے بانٹتے نہ تھکی ہو ۔۔مگر ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ کسی ایک بہت بڑی امید کے بندھنے سے اور …

گلہری کہ ناری  Read More »

ناسمجھی

ناسمجھی  کسی کی غرض کی پو ٹلی تھی اور کسی کی ہوس کی کوء انا کا بوجھ اٹھا لیا تھا تو کوئی نظریات کے چھابے ایک میں ہی کملی اس سب کو پیار و خلوص سمجھ کے خوشی سے دوہری چوہری ہو تی رہی

موقع اچھا ہے۔۔۔۔۔۔

کائنات بیدارہو کے انگڑائی لے رہی ہے کالے آسمان پر ایک روشن لکیر ہے بہت ہلکی ہے، بہت باریک ہے، مگر ہے ہاتھوں کو ڈس انفیکٹ کر نے کو کہا جا رہا ہے موقع اچھا ہے دلوں کو بھی ساتھ ہی ڈس انفیکٹ کر لو بغض، حسد، نفرت اور منافقت کو دھو ڈالو سچ میں …

موقع اچھا ہے۔۔۔۔۔۔ Read More »